ساہیوال:ڈی پی او آفس کے قریب دن دیہاڑے سرعام ڈکیتی کی انوکھی و عجیب واردات،

ساہیوال:ڈی پی او آفس کے قریب دن دیہاڑے سرعام ڈکیتی کی انوکھی و عجیب واردات،
حساس اداروں کے لیے بھی لمحہ فکریہ
تفصیلات کے مطابق آج دن دیہاڑے ڈی پی او آفس کے قریب شہری کو لوٹ لیا گیا،
52 جی ڈی کا رہائشی محمد حنیف نامی شخص عارفوالا میں امام مسجد ہے امروز وہ مال مویشی خریدنے کی نیت سے ساہیوال ڈی سی آفس کے قریب سے گزر رہا تھا کہ اسی دوران مبینہ طور پر سول کپڑوں میں ملبوس واکی ٹاکی وائرلیس تھامے ایک نامعلوم شخص اس کے پاس آیا اور اس کی جامہ تلاشی لیکر اس کی جیب میں موجود 2 لاکھ ننانوے ہزار روپے زبردستی اپنے پاس رکھ لیے اور اسے اپنے پیچھے پیچھے آنے کو کہا،شہری جیسے ہی اس کے پیچھے روانہ ہونے لگا تو ساتھ سے گزرنے والی کار نے اسے ٹکر ماردی جس کے نتیجے میں شہری زخمی ہوکر گرگیا جس کا فائدہ اٹھا کر حساس ادارے کا مبینہ اہلکار فرار ہونے میں کامیاب ہوگیا۔
یوں تو ساہیوال میں ڈکیتی کی وارداتیں روزمرہ کا معمول ہیں لیکن آج کی یہ واردات اپنی نوعیت کی پہلی اور عجیب واردات ہے،
اس سارے واقعہ میں سچائی کس قدر ہے یہ تو تفتیش سے ہی پتا چلے گا تاہم ابتدائی مبینہ معلومات کو اگر دیکھا جائے تو یہ واردات حساس اداروں کے لیے بھی لمحہ فکریہ کا موجب ہے کہ اس طرح کی گھناؤنی حرکت کرنے والا کون ہوسکتا ہے،اگر وہ کسی ادارے کا ملازم نہیں تو اس کے پاس واکی ٹاکی وائرلیس کیسے آیا،
یہاں یہ بات بھی قابل ذکر ہے کہ ساہیوال میں بہت سی پرائیوٹ سیکورٹی کمپنیز نے ایسے افراد جن میں زیادہ تر تعداد جرائم پیشہ افراد کی ہے بطور گارڈ بھرتی کر رکھے ہیں جن کو کھلے عام واکی ٹاکی سیٹ فراہم کیے ہوئے ہیں جو قانون نافذ کرنے والے اداروں کے لیے سوالیہ نشان ہے

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

*