ساہیوال: سی ای او ایجوکیشن اتھارٹی نے بھرتی پالیسی کے برعکس ہائی سکولوں کے ہیڈ ماسٹرز کے اختیارات سلب کرکے اپنے نام سے اشتہارجاری کردیا

ساہیوال: سی ای او ایجوکیشن اتھارٹی نے بھرتی پالیسی کے برعکس ہائی سکولوں کے ہیڈ ماسٹرز کے اختیارات سلب کرکے اپنے نام سے اشتہارجاری کردیا۔ہائی سکولوں میں بھرتی ہونے والے درجہ چہارم ملازمین کی درخواستیں سکولوں کے بجائے ڈی او سیکنڈری فوزیہ اعجاز کے دفتر بھجوانے کی ہدایت۔ضلع بھر میں نائب قاصد کی 65،چوکیدار/سکیورٹی گارڈ کی 109،مالی کی 64،خاکروب کی 33،بلاوی کی 09،واٹرمین کی 07،لیب اٹینڈنٹ کی 38،کلاس فور کی 13سمیت کل 338آسامیوں کو پر کرنے کیلئے چیف ایگزیکٹو آفیسر ڈسٹرکٹ ایجوکیشن اتھارٹی ساہیوال راؤ عتیق احمد نے خوداشتہارجاری کردیا حالانکہ یہ اشتہاربھرتی پالیسی کے مطابق سکول ہیڈز نے دیناتھا۔ساتھ ہی متعلقہ سکولوں میں درخواستیں بھجوانے کے بجائے ڈی ای او سیکنڈری فوزیہ اعجازاوراس کے ذیلی دفاتربھجوانے کی ہدایت کردی گئی۔ذرائع کے فوزیہ اعجاز ایک کرپٹ خاتون ہے جس کیخلاف فیصل آباد میں فرنیچر سمیت دیگر امورمیں بھاری بے ضابطگیوں پر انکوائریاں چل رہی ہیں۔حالی دنوں فوزیہ اعجاز کی ملی بھگت سے اس کے عملے نے اساتذہ کی جعلی اے سی آرز لکھ دی تھیں جس کاحجم ایک کروڑ سے زیادہ ہے ممکنہ کاروای سے سے بچنے کیلئے فوزیہ اعجاز نے اپنے ماتحتوں کی قربانی دیتے ہوئے خود کو بچانے کیلئے ہاتھ پاؤں مارنے شروع کردیئے ہیں۔ذرائع کے مطابق فوزیہ اعجاز اوراس کے عملہ نے فی بھرتی 2سے4لاکھ روپے ریٹ مقرر کررکھا ہے۔محکمہ تعلیم میں سرگرم کرپٹ مافیا ہیڈ ماسٹر ز کو بلیک میل کرکے ان سے جعلی بلوں اورتعیناتی آرڈر ز اورٹرمینٹ آرڈر پر دستخط کروالیتا ہے ۔شہریوں نے نیک نام کمشنر علی بہادر قاضی اورڈپٹی کمشنر شوکت علی خاں کھچی سے نوٹس لینے کا مطالبہ کیا ہے

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

*