ساہیوال آرٹس کونسل نے معروف شاعر اور افسانہ نگار ایزد عزیز مرحوم کی ادبی خدمات کے اعتراف میں انہیں مجید امجد ادبی ایوارڈ پیش کیا

ساہیوال آرٹس کونسل نے معروف شاعر اور افسانہ نگار ایزد عزیز مرحوم کی ادبی خدمات کے اعتراف میں انہیں مجید امجد ادبی ایوارڈ پیش کیا جو ان کی بیٹی نے وصول کیا۔ اس موقع پر ڈاکٹر ریاض ہمدانی ڈائریکٹر آرٹس کونسل نے کہا کہ مجید امجد ادبی ایوارڈ کے اجرا کا مقصد ادباء اور شعراء کی علمی و ادبی خدمات کا اعتراف کرنا ہے۔ معاشرے کو فکری اعتبار سے آگے بڑھانے والے اس طبقہ کی پذیرائی کے سلسلے میں آرٹس کونسل نے پانچویں مجید امجد ادبی ایوارڈ 2021 کے لیے گزشتہ برس معروف شاعر ایزد عزیز مرحوم کا نام تجویز کیا تھا لیکن دل کا اچانک دورہ پڑنے سے وہ اپنے خالق حقیقی سے جا ملے۔ ساہیوال آرٹس کونسل نے اپنا وعدہ نبھاتے ہوئے مرحوم کا ایوارڈ ان کی فیملی کو پیش کیا ھے۔ یاد رہے کہ مرحوم کی وفات پر وزیر اعلی پنجاب سردار عثمان بزدار، کمشنر ساہیوال ڈویژن نادر چٹھہ اور ملک کے مختلف ادبی حلقوں نے تعزیتی پیغامات بھیج چکے ہیں۔ ساہیوال آرٹس کونسل کی طرف سے ھونے والے تعزیتی ریفرنس میں مرحوم شاعر کی یاد میں پھول رکھے گئے اور دیے روشن کیے گئے۔ مقررین نے ساہیوال کی عظیم ادبی روایت میں ایزد عزیز کے نمایاں کردار کو سراہا اور انہیں ساہیوال کی ادبی پہچان کے طور پر یاد کیا۔ پروگرام کی صدارت پروفیسر سید اکبر شاہ نے کی جبکہ زینب عزیز بنت ایزد عزیز نے بطور مہمان خصوصی شرکت کی۔ مہمانان اعزاز کے طور پر پروفیسر سید ریاض حسین زیدی اور راو شفیق احمد نے اظہار خیال کیا۔ ساہیوال کے نامور شاعر واصف سجاد نے نظامت کے فرائض سرانجام دیے جبکہ مقررین میں نعیم نقوی، پروفیسر اکرم ناصر،پروفیسر افتخار شفیع،محمد فاروق اظہر،حسرت بلال،اللہ یار ثاقب،امتیاز احمد بٹ،یاسر رضا آصف، عاصم اسلم اور راو نعمان کے نام شامل ہیں۔ ساہیوال کے ادبی و سماجی حلقوں نے آرٹس کونسل کی اس عمدہ روایت کو سراہا اور اس بہترین ادبی سلسلے کو خراج تحسین پیش کیا۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

*